نمازپڑنے کا طریقہ

نمازپڑنے کا طریقہ:

تمام شرائط نمازکے ساتھ باوضو قبلہ کی طرف رخ کر کے ا س طرح کھڑے ہو ںکہ دو نوںپیروںکے درمیان چار انگل کا فا صلہ رہے او ردونوںہاتوںکو لٹکائے ہو ے رکھے اور پڑھے انی وجھت وجھی للذی فطرالسموت والارض حنیفا وماانامن المشر کین پھر دل سے نیت کرے اور زبان سے نیت کے الفاظ کہہ لینا بہترہے۔ مثلا فجر کی دو رکعت فرض نماز پڑتاہوں واسطے اللہ تعالیٰ کے منہ میرا کعبہ شریف کی طرف ۔اور اگر دوسرے نمازوںکی نیت کرناہوتو فجرکی جگہ دوسرے نمازوںکی نیت کرے ۔نیت کے وقت دنوںہاتھ کانوںکی لوتک اٹھائے اس طرح کہ دونوں انگوٹھے کانوں کی لوکو چھولیں اور ہتیلیاںقبلے کی طرف ہوں اور انگلیاںاپنی حالت میں ہوں یعنی نہ زیادہ کھلے نہ پورابند ۔پھر تکبیر تحریمہ کہکر دونو ںہاتھ ناف کے نیچے اس طرح با ندھ لے کہ دائیںہاتھ کی ہتیلی بائیںہاتھ کی کلائی پر ہو اور دائیںہاتھ کی چھو ٹی انگلی اور انگوٹھے کوحلقہ (گول )بناکر بائیںہاتھ کو پکڑلے باقی بچی تین انگلیاںکلائی پر رکھے۔اور نظر سجدہ کی جگہ پر رکھے پھر آہستہ سے ثناء ،تعوذاور تسمیہ پڑھے پھر سورہ فاتحہ پڑھکر آہستہ سے آمین کہے اسکے بعد ضم سورہ یا تین اٰیتیں یا ایک ایسی بڑی اٰیت جوتین اٰیتو ںکے برابرہو پڑھے پھر اسکے بعد تکبیر (اللہ اکبر )کہتے ہوے رکوع میںجائے اور گھٹنوںکو دونوںہاتوں سے سختی سے پکڑکرطاق عدد میںرکوع کی تسبیح پڑھے ۔ اس وقت نظر دونوںپیروںپر ہو ۔ پھر تسمیع کہتے ہوے قومہ( ہاتھ چھوڑکر کھڑے ہونا )میںجاکر تحمید کہے پھر تکبیر کہتے ہوے سجدہ میں چلے جائے سجدہ میںجاتے وقت پہلے گھٹنے پھر ہاتھ پھر ناک پھر پیشانی زمین پر رکھے اس طرح کہ پیشانی دونوں ہاتوںکے درمیان انگو ٹھے کے مقابل رہے سجدہ میںپاؤں کی ایک انگلی زمین پرلگے رہنافرض اور تین واجب اور سب انگلیا ںسنت ہے اور بازو بغل سے پیٹ زانوںسے ران پنڈلی سے کہنیاںزمین سے علیحدہ اور ہاتھ پاؤں کی انگلیا ںملی ہو ئی ہو سب قبلے کی طرف ہو اور طاق عدد میںسجدہ کی تسبیح کہے اور نظرناک پر رہے پھر تکبیر کہتے ہو ے جلسہ میںآجائے اس طرح کہ پہلے پیشانی پھر ناک پھر ہا تھ اٹھائے جلسہ میںکم ازکم ایک تسبیح کے مقدار بیٹھارہے پھر تکبیر کہتے ہوئے پہلی مرتبہ کی طرح سجدہ میںجائے اور تسبیح پڑھے (طاق عدد میں)پھر تکبیر کہتے ہوئے قیام (سیدھاکھڑے)میںآجائے پھر آہستہ تسمیہ پڑھکر سورہ فاتحہ اور ضم سورہ پڑھے پھر پہلی رکعت کی طرح رکوع سجدہ اداکرکے قعدہ میںبیٹھ جائے اور قعدہ میںنظراپنے گودمیںہوناچاہئے قعدے میںبیٹھ کر تشہد (التحیات) پڑہے تشہدکے اخیر اشھدان لاالہ الااللہ واشھدان محمداعبدہ ورسولہ کہتے وقت لاالٰہ پرانگلی سے اشارہ کرے اس طرح کہ داہنے ہاتھ کی چھوٹی انگلی اوراس کے پاس کی انگلی کو بند کرکے اور بیچ کی انگلی اور انگوٹھے کا حلقہ بناکر کلمہ کی انگلی کو ٹھیک لاالٰہ پر اٹھائے اور اِلاّاللہ کہتے وقت رکھ دے پھر اسکے بعد درودِشریف اور دعاء ماثورہ پڑھکر پہلے دائیںطرف السلام علیکم ورحمۃ اللہ کہتے ہوے منہ پھیرے اس طرح کہ پیچھے سے دائیںطرف کے رخسار دکھائی دے اس وقت دائیںطرف کے فر شتوںپر سلامتی کی نیت کرلے اور اگر جماعت ہوتو دائیںجانب کے لو گو ں اور اگر امام ہوتوامام پر سلامتی کی نیت کرے پھر اسی طرح بائیںطرف بھی سلام پھیرے بس نماز ختم ہوگئی ۔
نوٹ : مرد عورت دونو ںکے نماز پڑھنے کا طریقہ یکسا ںہے لیکن عورت کے نمازپڑھنے میں صرف اتنا فرق ہے کہ تکبیر تحریمہ کے وقت عورت اپنے ہاتھ صرف کاندھوں تک اٹھائیگی اور تکبیر کے بعد اپنے ہاتھ سینہ پر باندھے گی اس طرح کہ دائیں ہاتھ کی ہتھیلی بائیںہاتھ کی پشت (پیٹھ )پر ہو ۔رکوع میںکم جھکے گی ، سمٹی رہیگی ، گھٹنوںکو جھکالے گی ، گھٹنوں پرہاتھ صرف رکھے گی پکڑے گی نہیں ا ور ہاتھ کی انگلیاںملی ہوئی ہو گی ۔ سجدے میںبغل نہ کھو لے گی ہاتھ زمین پر بچھا کرسمٹی رہے گی اور قعدہ (اولی یا اخیرہ )میںدونو پاؤںدائیںطرف نکال کر سرین(ڈھو پر)پربیٹھے رہے گی ہاتھو ںکی انگلیا ںملا کررکہے گی اور کسی بھی نماز میںبلند آواز سے نہ پڑھے گی۔